Untold Storiess
We Stand With Khan

We Stand with Khan — سیاست نہیں ریاست

4+
We Stand With Khan
We Stand With Khan

سیاست نہیں ریاست

We Stand With Khan

        میں آج جس موضوع پر تحریر قلمبند کرنے جا رہی ہوں وہ موضوع اس لیے بھی اہم ہے کیونکہ کچھ لوگوں نے ریاست سیاست اور صحافت کو مزاک بنا رکھا ہے اور اسے اپنی دکان چمکانے کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔ اگر اللہ نے مشکل وقت ڈالا ہے تو پوری دنیا ہی اس لڑ رہی ہے صرف ہم نہیں ہیں مگر بہت سے صحافی اور سیاسی پارٹیاں کرونا کی اس جنگ میں بھی اپنی سیاست اور صحافت چمکانے کا موقع کہیں نہیں چھوڑ رہیں۔
جسکو جب اور جہاں موقع ملے ہمارے لیڈر ہمارے رہنما وزیراعظم اسلامی جمہوریہ پاکستان جناب عمران خان کے بارے غلط بیانی اور الزام تراشی کر رہا ہے جبکہ یہ سرا سر غلط ہے اور کرنے والا بھی جانتا ہے کہ وہ بے تکی اور بے جوڑ باتیں کر رہا ہے پھر بھی مجال ہے کوئی باز آئے۔ جس طرح فوری طور پر عمران خان نے کرونا کے حوالے سے بہترین اقدامات کیے ہیں میں پورے وثوق کے ساتھ یہ بات کہہ سکتی ہوں کہ انکی جگہ کوئی بھی لیڈر ہوتا تو کبھی اتنا نہ کر پاتا۔ بلکہ انٹر نیشنل لیول پر بھی  عمران خان سے زیادہ اچھے اقدامات کم ہی کسی نے کیے ہونگے۔ اور انکا رزلٹ ہمارے سامنے ہے۔
امریکہ جو دنیا کی سب سے بڑی طاقت ہے وہاں اور پاکستان میں کرونا وائرس ایک ساتھ شروع ہوا تھا اور آج وہاں اس بیماری کی شرح دیکھ لیں اور پھر پاکستان میں دیکھیں پاکستان امریکہ سے بھی بہتر طریقے سے اس بیماری سے لڑا ہے اور اسکا سارا کریڈٹ عمران خان کو جاتا ہے اورانکی پالیسیز کو جاتا ہے۔پوری دنیا میں صرف چائنا نے وبا کےپھیلتے ہی پورٹس پر “ہیٹ ڈیٹیکشن سسٹم” لگایا  تھا تاکہ جو بھی بیرونی ممالک یا دوسرے شہروں سے آئے تو اسکا پہلے چیک اپ ہو اگر اسے ہلکا بخار بھی ہے تو اسے ہسپتال منتقل کیا جاتا تھا وگرنہ چھوڑ دیا جاتا تھا اور چائنا کے بعد یہ کام پاکستان نے کیا جو کہ اس بیماری کے کنٹرول کی سب سے بڑی وجہ ہے۔

اسکے بعد خان نے “نیشنل کوارڈینیش کمیٹی” بنائی جس میں فیڈرل ، صوبائی،ملٹری اور بیوروکریسی کے ایکسپرٹس موجود ہیں جو کہ روزانہ کی بنیاد پر کرونا کے کیسیز کو لے کر پالیسیز اور ٹرینڈ بناتے ہیں۔ اس میں چائنہ کی طرف سے بھی لوگ شامل کیے گئے ہیں۔
پاکستانیوں کو  فخر ہونا چاہیے کہ ہمیں ایک ایسا لیڈر ملا ہے جو صرف بولنے کی حد تک کام نہیں کرتا بلکہ عملا بھی کرتا ہے۔ایک ایسا لیڈر جو خود سے پہلے اپنی غریب عوام کے بارے میں سوچتا ہے۔ ایک ایسا لیڈر جسکے لیے خود سے پہلے ریاست اہم ہے۔ اب بہت سے لوگ یہ کہتے ہیں کہ مکمل لاک ڈاؤن کیا جائے۔ یہاں تک کہ ریحام خان نے عمران خان کے گزشتہ خطاب کے بعد  اپنے ایک ٹویٹ میں لکھا
“‏سلیکٹڈ کے آج کے خطاب کا خلاصہ: جب تک چین جتنی ہلاکتیں نہیں ہو جاتی تب تک لاک ڈاؤن نہیں کروں گا ۔🙏🙏🙏”
میں ان پر کوئی تنقید نہیں کروں گی کیونکہ یہ وقت تنقید کا نہیں متحد ہونے کا ہے مگر میں ان سے اور ان جیسی سوچ رکھنے والے سینکڑوں لوگوں سے بس ایک سوال کرنا چاہوں گی کہ اگر مکمل لاک ڈاؤن ہو جائے توپورے پاکستان کو دیہاڑی دار مزدور اور دوسرے کئی لوگوں کو مکمل کورنٹائن کی سہولت آپ لوگو فراہم کریں گے۔
ہم ایسی ریاست کا حصہ نہیں ہیں جہاں ہم سب کو برابر طرز زندگی دے سکیں۔ ایسے لوگوں کو پہلے خود سوچنا چاہیے کہ وہ ملک کے لیے آخر کتنا کر رہے ہیں۔ مجھے ایک ایسا بندہ ڈھونڈ کر دے دیں جو عمران خان سے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کر سکے۔ لوگ جو مرضی کہیں اللہ نے عمران خان کو عزت دی ہے اور میں اور میرے جیسے کئی لوگ انکی عزت  کرتے ہیں اور کرتے رہیں گے۔۔ نہ صرف عزت بلکہ انکے قدم قدم پر ہم انکے ساتھ ہیں۔ عزت اور زلت دینے والا اللہ ہے سیاست اور صحافت چمکانے والے لوگ کچھ نہیں بگاڑ سکتے جب تک اللہ نہ چاہے۔    

 #WeStandWithKhan

  @PtiTeampakistan

وَتُعِزُّ مَنْ تَشَآءُ وَتُذِلُّ مَنْ تَشَآءُ ۖ
Shield
سورہ العمران
آیت 26
Disclaimer: We Stand with Khan is to commemorate the present government for its drastic measures against the Covid-19 Outbreak. Untold Storiess has no political affiliation with anyone in concerned.
Mehar Fatima
Editor

We Stand With Khan -- سیاست نہیں ریاست

For More related articles click the tablet blow

4+

2 thoughts on “We Stand with Khan — سیاست نہیں ریاست”

  1. ماشاءالله فاطمہ بہت ہی اچھی لکھتیں آپ، اللہ کرے دن دگنی رات چگنی ترقی کریں آپ۔ ووئی آل ول سپورٹ یو انشا اللہ۔

    0
    0

What are your Thought's ..???