Untold Storiess
Justice In Different Prospects

Justice in Different Prospects | عدل ملکی حالت کے تناظر میں

3+
Justice In Different Prospects

Justice In Different Prospects

عدل ملکی حالت کے تناظر میں

Justice In Different Prospects | By M. Junaid Babar  سنا تھا دیواروں کے بھی کان ہوتے ہیں وہ سب سنتی ہیں۔میں سوچتا ہوں اگر انہیں دیواروں کی زبانیں بھی ہوتیں تو عدالتی دیواریں آئے دن گرائ جاتیں،اپنے اندر سجنے والی عدل کی منڈی کا حال سنانے کے جرم میں.کیونکہ اس چاردیواری کی چوکتے پھلانگتے ہی تمام جھوٹ جائز بن جاتے ہیں اور سچ انصاف کی مانگ کرنا تو دور کی بات اپنی عزت بچانے کی خاطر کونوں میں منہ چھپاتا پھرتا ہے۔وہاں کسی امیر زادے کی وقتی شہوت کی بھینٹ چڑھی دوشیزہ کو طوائف ہونے کی سند تھما دی جاتی ہے۔ایک معصوم پر خنجر کے چوبیس وار کرنے والا شاہ حسین اپنے باپ کے کالے کوٹ میں اپنی سیاہ کرتوت چھپا دیتا ہے۔دو بھائیوں کو یہ نوٹوں پر رالیں ٹپکاتے انصاف کے مندر اس وقت باعزت بری کرتے ہیں جب انہیں جیل میں مرے ہوئے دس سال گذر چکے۔مگر دوسری طرف مسند شاہی پر بیٹھے چوروں کو بچانے کی خاطر سرکاری تعطیل کے روز بھی عدالتی کواڑ کھولے جاتے ہیں۔سیاسی سزائیں اور جزائیں دان کی جاتی ہیں۔عسکری اور سیاسی ڈوروں پر کٹھ پتلی کی طرح ناچتے یہ عدل کے چوراہے اپنے مرعات پر بکے ہوئے فیصلوں سے کئی ماوں کے لعل اور بہنوں کے حفاظتی حصار نگل جاتے ہیں۔اور پھر اپنے بھائیوں کے ناانصافی کی سولی چڑھی لاشے اٹھانے والے شرفا دہشت گرد بنتے ہیں

Judicial System of Pakistan, Nawaz Sharif Justice, National Accountability Bureau Pakistan, Imran Khan, PTI, Pakistan Threk e insaf, PML N, Pakistan Muslim League N Todaypk, daily Pakistan, today.pk, dailypakistan, bbc urdu Pakistan, e sahulat, today pk, jang.com.pk, jang breaking news, daily jang latest news,

dawn news urdu, daily express urdu, urdu news paper, the news urdu, articles, qaumi akhbar, urdu columns, pak urdu news, daily express (urdu newspaper), jang akhbar, daily express urdu newspaper, hamid mir column, express urdu newspaper, urdu writing online, pak news urdu, daily urdu columns, urdu news point,

Justice In Different Prospects | عدل ملکی حالت کے تناظر میں

عدالتوں میں گلہ پھاڑ پھاڑ کر شور مچاتی یہ بے انصافی چار دیواروں سے نکل کر پچھڑے ہوئے علاقوں اور علاقوں سے صوبوں تک کو اپنی لپیٹ میں لے چکی۔بلوچستان کو آج تک کوئ ایسا رہنما میسر نا آسکا جو انکے تمام مسائل پر دیرینہ نگاہ گاڑتے ہوئے انکے حل کا سوچ سکے۔وہ صوبہ جو حکومت کی معمولی سی نظر کرم سے خوشحال ہونے کے ساتھ ساتھ پاکستان کے خزانے میں اپنے قدرتی وسائل سے اربوں روپے سالانہ کا اضافہ کر سکتا ہے آج غیر امتیازی سلوک کے چلتے،باغی اور دہشت گرد پیدا کر رہا ہے۔میں ملک میں عدل کے کباڑے کا ذمہ دار کسی ایک سیاسی تنظیم کو نہیں ٹھرا سکتا۔کیونکہ اتنا رائتہ پھیلانا کسی ایک کے بس کی بات تھوڑی ہے۔مگر اس میں کہیں نہ کہیں قصور تو ہم اندھے تقلیدیوں کا ہی ہے۔جس کے پاس لاٹھی ہو ( یہاں لاٹھی سے میری مراد کچھ جوشیلے نعرے،سابقہ حکومت پر کیچڑ اچھالنے کا ہنر،اور فریب میں لپٹے جذباتی وعدے ہیں)وہ ہمیں بھینس بنا کر کسی بھی سمت دھکیلنے کا پورا پورا حق رکھتا ہے۔اور ہم لوگ جب بھی کسی سیاسی تنظیم کے حق میں ہوئے تو ہم نے انکے کالے کرتوتوں سے یکسر منہ پھیرنا ہی مناسب سمجھا۔سیاسی بحران سے زیادہ خطرہ ہمیں سیاسی سوچ کے بحران سے ہیں۔سیاست کو سمجھنے سے قاصر دماغ صرف اور صرف شخصیات کو پوجا کرتے ہیں اور انکے ہر اچھے اور برے قدم پر فابی ائی اللہ تکذیبن کا ورد جاری رکھتے ہیں۔اس تمام تناظر میں اصل محور تو انصاف سے دوری ہی ہے۔ٹھیک ہے آپکو کسی سیاسی تنظیم کا منشور پسند آیا اور آپ نے انہیں چن لیا۔مگر یہ کس قسم کی عقل ہے کہ ووٹ دینے کے بعد ہر وعدہ ٹوٹنے پر آپکو گالیوں،اور پچھلی حکومت کی بری پالیسیوں کی زرہ پہن کر میدان بحث میں اتر کر اسکا دفع بھی کرنا ہے۔براہ مہربانی اس بات کو سمجھیئے کے اصلاح کے لئیے تنقید ضروری ہے۔اور سیاسی نشان کے تقدس سے پہلے سبز ہلالی پرچم پر بنا چاند ستارے کا نشان اہم ہے۔ریاست کی بنیاد عدل پر رکھی جاتی ہے۔مگر سال ہا سال کی یہ بے انصافیاں چاہے وہ حکومت کی طرف سے ہوں یا عوام کی طرف سے اس پاک ریاست کو جڑ سے بھربھرا کر دیں گی۔اور تمام سیاسی جماعتیں اس ملک میں تب تک ہیں جب تک یہ ملک انہیں اپنے شکم تر کرنے اور تجوریاں بھرنے کے لیا دھن دے رہا ہے۔اللہ نہ کرئے کے کبھی ایسے حالات نہ رہیں تو انکی جیبیں مکمل بھری ہیں یہ کسی اور جگہ بھاگنے میں دیر نہیں کریں گے۔مگر ملک تو ہمارا ہے تو بچانا بھی ہم نے ہے۔

Justice In Different Prospects |
عدل ملکی حالت کے تناظر میں
Urdu Article By
Justice In Different Prospects
M. Junaid babar
Writer

Justice In Different Prospects | عدل ملکی حالت کے تناظر میں

More from
Politics

Click the tabs blow to cheek the latest articles in the same catagory

The Stories Within
Challenges Faced By Education Sector in Pakistan-Part 1 | پاکستان کے تعلیمی مسائل
25Oct

Challenges Faced By Education Sector in Pakistan-Part 1 | پاکستان کے تعلیمی مسائل

0 Challenges Faced By Education Sector In Pakistan-Part 1 پاکستان کے تعلیمی مسائل Challenges Faced By Education Sector In Pakistan-Part 1 | پاکستان کے تعلیمی مسائل | Urdu Article |

The Tsunami of Inflation | مہنگائی کا سونامی
20Oct

The Tsunami of Inflation | مہنگائی کا سونامی

0 The Tsunami Of Inflation مہنگائی کا سونامی The Tsunami Of Inflation | مہنگائی کا سونامی | Urdu Article | By Naeem Ud Din Farooqi | پاکستان میں ہر سیاسی

Independence Day of Pakistan 2020 | یوم تشکر
14Aug

Independence Day of Pakistan 2020 | یوم تشکر

3+ Independence Day of Pakistan 2020 یوم تشکر Independence Day of Pakistan 2020 | By Ayesha Siddiqui |  پھر ولولہ ہے شور ہے ، جشن آزادی کے اطوار ہی کچھ

Justice in Different Prospects | عدل ملکی حالت کے تناظر میں
04Jul

Justice in Different Prospects | عدل ملکی حالت کے تناظر میں

3+ Justice In Different Prospects عدل ملکی حالت کے تناظر میں Justice In Different Prospects | By M. Junaid Babar  سنا تھا دیواروں کے بھی کان ہوتے ہیں وہ سب

Mafia in Pakistan | آٹا اورچینی کا بحران — ایک تنقیدی جائزہ
20Apr

Mafia in Pakistan | آٹا اورچینی کا بحران — ایک تنقیدی جائزہ

8+ Mafia In Pakistan آٹا اورچینی کا بحران — ایک تنقیدی جائزہ Mafia In Pakistan   ایف آئی اے نے کچھ دن پہلے آٹا اور چینی کی کمی اور زخیرہ اندوزی

Political Facts of Pakistan (Part 2) — سیاہ حقائق
10Apr

Political Facts of Pakistan (Part 2) — سیاہ حقائق

1+ Political Facts of Pakistan (Part 2) سیاہ حقائق 2007 سے لیکر 2017 تک امریکہ کی ریاست فلوریڈا میں گنے کی ایوریج قیمت 35 ڈالر فی ٹن تھی یعنی 1

Justice In Different Prospects | عدل ملکی حالت کے تناظر میں

Cheek out the Latest Updates from Untold Storiess:

3+

What are your Thought's ..???